پاکستان اور خارجہ حکمت عملی

پاکستان اور خارجہ حکمت عملی

November 13, 2018 12

کسی بھی ملک کے خارجہ تعلقات اس ملک کی عالمی سیاست میں اہمیت کا رخ تعین کرتے ہیں۔ مملکت خداد پاکستان ان ممالک میں سے ہے جو بہت اہم جغرافیائی مقام پر ہونے کی وجہ سے پورے عالم میں ایک خاص مقام رکھتا ہے پھر چاہے وہ چین کی گرم پانیوں تک رسائی کی خواہش ہو یا ریاست ہائے متحدہ امریکہ کی گرم علاقوں سے فرار کی کوشش۔

اس سب کے پیش نظر ریاستی سطح پر مظبوط ممالک سے بہتر تعلقات بھی ریاست کی عالمی سیاست میں تشخص کو دوام بخشتے ہیں! یک قوتی فرنٹ میں امریکہ کے بغل بچے ہونے کے باوجود اگر آج ریاست کسمپرسی کا شکار ہے تو اسکی بڑی وجہ خارجہ معاملات میں کام نہ کرنا ہے۔

پاک چین اقتصادی راہداری، پاکستانی خارجہ حکمت عملی کا اہم ترین ستون

موجودہ حالات میں چین جیسی ابھرتی ہوئی طاقت سے نہایت بہتر تعلقات کا ہونا اس ملک کے لیئے کس قدر اہمیت کا حامل ہے، اس کا اندازہ لگانا مشکل نہیں۔ یہاں اس امر کا ادراک بھی ازحد ضروری ہے کہ قومی تشخص کسی بھی دوسرے ملک سے بہتر تعلقات سے مبرا اور اعلی ہے!

گرم پانیوں تک روس کی رسائی کو فوجی قوت سے روکنا اور ریاستی سطح پر چینیوں کو ایک محفوظ راستہ دینا بھی ایک بہتر خارجہ پالیسی کی عکاس ہے۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ چین کے اس سفرنامے کو دنیا کے دیگر ممالک خصوصا اقوام متحدہ کے زریئے دیگر مملک تک پہنچا دیا جائے تاکہ ملک میں سرمایہ کاری آ سکے!

یہاں ایک تلخ حقیقت سے پردہ اٹھانا بہت ضروری ہے کہ “برادر اسلامی ممالک” کی سوچ کو ختم کیا جائے۔ اس سوچ نے بحیثیت قوم ہمیں بہت نقصان پہنچایا ہے۔ اسلامی ریاست میں زمیں سرحدوں اور مفادات کی پابندیوں سے پاک ہے جس کا ادراک ہماری 70 سالہ تاریخ سے بخوبی ہو سکتا ہے!

حضور، آقا بدلے ہیں تو غلامی کے نئے ڈھنگ بھی سیکھئے!

شراکت دار: دانش حبیب

Editorial Desk
EditorialDesk
Leave a Reply

Your email address will not be published.